عام عادات جو دماغی طور پر مضبوط بناتی ہیں

 

زندگی میں ہر فرد کے کچھ نہ کچھ مقاصد، خواب یا عزائم ہوتے ہیں، مگر وہ ان کے حصول میں ناکام رہ جاتے ہیں۔ اور اس کی بڑی وجہ ذہنی طور پر اتنا مضبوط نہ ہونا ہوتا ہے جو کسی مقصد، خواب وغیرہ کے حصول کے لیے ضروری ہے۔ اگر آپ کو بھی ایسے حالات کا سامنا ہوتا ہے تو الجھن کا شکار ہونے کی بجائے اپنے دماغی مسلز کو مضبوط بنانے کے بارے میں سوچیں تاکہ اپنے خوابوں کی تعبیر ممکن بناسکیں۔ ڈان کی ایک رپورٹ کے مطابق چند عام سی چیزوں کو اپنا کر آپ رواں سال اپنے آپ کو ذہنی طور پر زیادہ مضبوط اور طاقتور بنا سکتے ہیں۔


اپنے جذبات کو نام دینے کی مشق
اپنے احساسات کو کوئی نام دینا ان کی شدت میں کمی لاتا ہے، تو آپ اداسی، ذہنی بے چینی، اشتعال یا خوف محسوس کررہے ہوں، تو اس کا اعتراف بھی کریں۔ اسی طرح توجہ مرکوز کریں کہ وہ جذبات کس طرح آپ کے انتخاب پر اثرانداز ہوتے ہیں، جیسے ذہنی بے چینی کی صورت میں ہوسکتا ہے کہ آپ مقصد کے حصول کے لیے خطرات مول لینے کے لیے تیار نہ ہوتے ہوں یا جوش میں ہونے پر زیادہ مضطرب فطرت کے حامل ہوجاتے ہوں، وغیرہ وغیرہ۔ اپنے جذبات کے حوالے سے شعور بڑھانے سے آپ جذبات پر مبنی فیصلوں کے امکانات کو بھی کم کرسکیں گے۔


غیر اطمینان بخش جذبات پر قابو پانا
اپنے جذبات کو نام دینا تو اس جنگ کا ایک حصہ ہے، آپ کو انہیں کنٹرول میں رکھنے کی صلاحیت کی بھی ضرورت ہوتی ہے یا ابھی آپ کیسے ان سے نمٹتے ہیں سوچیں، جیسے الجھن کا شکار ہونے پر زیادہ کھاتے ہیں؟ غصہ آنے پر باہر کا رخ کرتے ہیں؟ ذہنی تشویش پر گھر بیٹھ جاتے ہیں؟ ایسی حکمت عملیاں کچھ وقت کے لیے تو ذہنی طور پر اچھا محسوس کرنے میں مدد دیتی ہیں مگر طویل المعیاد بنیادوں پر بدترین اثرات مرتب کرتی ہیں۔ ایسی اسکلز کے بارے میں سوچیں جو طویل المعیاد بنیادوں پر فائدہ مند ہوں، ہر فرد اس حوالے سے مختلف سوچ کا حامل ہوسکتا ہے، تام کچھ چیزوں کو اپنایا جاسکتا ہے جیسے، گہری سانسیں لینا، ورزش، مراقبہ، مطالعہ اور فطرت میں وقت گزارنا وغیرہ۔


منفی سوچ کی شناخت
آپ کے سوچنے کا انداز احساسات اور رویے پر بھی اثرانداز ہوتا ہے۔ جیسے میں یہ کام نہیں کرسکتا یا میں احمق ہوں، ذہنی طور پر مضبوط نہیں ہونے دیتا۔ اپنے خیالات پر توجہ مرکوز کریں، تو آپ ان میں مشترکہ تھیمز اور پیٹرن دیکھ سکیں گے، نقصان دہ خیالات پر ردعمل ظاہر کرنا ان سے نجات میں مددگار ثابت ہوتا ہے، تو خود کو ناکام سمجھنے کی بجائے یہ یاد کروائیں یہ میرے پاس ابھرنے کا موقع ہے اور میں جس حد تک ممکن ہوا بہتر کروں گا۔


مثبت اقدامات
اپنے دماغ کو تربیت دینے کا بہترین طریقہ اپنے سوچنے کو انداز کو بدل دینا ہے، مشکل کام کریں اور لگاتار کوشش کرتے رہیں چاہے آپ کو لگے کہ آپ وہ کام نہیں کرسکتے۔ بس اپنے آپ پر ثابت کریں کہ آپ اندازوں سے زیادہ مضبوط ہیں۔ صحت مند روزمرہ کی عادتوں کو اپنائیں جیسے ورزش، مناسب نیند، صحت بخش غذا اور شکرگزاری، تاکہ دماغ اور جسم بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرسکیں۔


بری عادتوں سے نجات
اچھی عادتیں اس وقت تک موثر نہیں ہوتیں جب تک آپ بری عادتوں سے نجات نہیں پالیتے، یہ ایسا ہی ہے جیسے ورزش کرتے ہوئے آپ جسمانی وزن میں اضافہ کرنے والی غذا کھا رہے ہوں۔ ذہنی مضبوطی کی دشمن بری عادتوں کی شناخت کریں جو سب میں ہی ہوتی ہیں، جیسے خود کو کمتر سمجھنا یا دیگر افراد کی کامیابی سے حسد وغیرہ۔ یہ عادتیں زندگی میں ایک جگہ سے آگے بڑھنے نہیں دیتیں، ان کو شناخت کرکے ان کی جگہ مثبت عادتوں کو دیں، اس سے آپ کو اپنے مقصد کی جانب بڑھنے میں مدد ملے گی۔

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
14 Jan, 2018 Total Views: 1944 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
We’d all love our brains to process information faster and have better memory recall. While you might think doing crossword puzzles, math puzzles like Sudoku, or brain-training apps will keep your brain in top shape, Dr. Jennifer Jones, a psychologist and expert in the science of success, says there’s no real proof that these can improve your mental acuity. Some daily practices that can truly grow your brain:
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB